نغمہ # ہوتا ہے سلیقہ جن میں

ہوتا ہے سلیقہ جن میں زندگی قرینے  سے جیتے ہیں

پڑجائے جو بھی وقت ان پر کام طریقے سے لیتے ہیں

جس محفل  میں ہوتے  ہیں  یہ  جانِ  محفل  ہوتے  ہیں

عام  سے  لوگ  ہوتے  ہیں  یہ  شانِ  محفل  ہوتے  ہیں

تنگ  دلوں  کی  ہے   یہ  کہانی ، کہ  نفرت   کرتے  ہیں

محبت  کے  یہ  متوالے ان  سے  بھی  محبت  کرتے  ہیں

اِن  کے  ہی  دم  سے  زندگی  میں  خوشیاں  بکھرتی  ہیں

اِن  کے  ہی   دم   سے   قوم   کے  اطوار   سنورتے   ہیں

دنیا میں  جب  اِن کا چرچہ  ہو گا ، پیغامِ  اُلفت  ہر  سو  ہوگا

دہر ہو گی امن  کا گہوارہ ، سکندرؔ ہم یہ  دعویٰ کرتے  ہیں

سکندرؔ

One thought on “نغمہ # ہوتا ہے سلیقہ جن میں

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s