گیت# نہ جانے کیوں میرے دل میں خیا لات کی برسات ہوتی ہے

نہ جانے کیوں دل میں خیا لات کی برسات ہوتی ہے

اور جب تم پاس ہوتے ہو، تو یہ بات نہیں ہوتی ہے

ارے آجایا کرو  ،مل جایا کرو  ،دیوانے کی سن جایا کرو

دیوانے کی سن جایا کرو

مت ترسایا کرو

ارے ہاں ہاں مت ترسایا کرو

روٹھے ہواتنے کیوں  پیار میں ضد اچھی نہیں ہوتی ہے

تم نے جوپیار کا اظہار کیا ہے ہم  نے بھی اقرار کیا  ہے

ہم نے بھی اقرار کیا ہے

ہاں پیار کیا ہے

ارے ہاں ہاں پیار کیا ہے

محبت کے چمن میں توپیارکی کوئی سوغات نہیں ہوتی ہے

تم نے جو ترچھی نظروں سے دیکھا ہےدل کو تڑپا دیا ہے

دل کو تڑپا دیا ہے

مجھے ترسا دیا ہے

ہاں ہاں مجھے ترسا دیا ہے

چلے بھی آؤشبستان میں ایسے ہی تو رات نہیں ہوتی ہے

دیکھو میرے  دلبر زمانہ ظالم ہے، ہر بات پہ بگڑ جاتا ہے

ہر بات پہ بگڑجاتاہے

سمجھ نہیں پاتاہے

ہاں ہاں سمجھ نہیں پاتا ہے

اس پیار میں دل کو سمجھانے کی کوئی بات  نہیں ہوتی ہے

پیارمیں اتنا نہ اتراؤ، اتنا نہ بل کھاؤ تم کو نظر لگ جائےگی

تم کو نظر لگ جائے گی

تقدیر بگڑجائے گی

ہاں ہاں تقدیر بگڑ جائے گی

ستمگر زمانے سے داستاں پیار کی برداشت نہیں ہوتی ہے

نہ جانے کیوں دل میں خیا لات کی برسات ہوتی ہے

اور جب تم پاس ہوتے ہو ، تو یہ بات نہیں ہوتی ہے

سکندرؔ

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s